1,126

ترجمان ڈیرہ چوہدری عابدرضا کا چوہدری الیاس کو منہ توڑجواب

کوٹلہ ارب علی خان(پاسبان نیوز)سابق امیدوار پی ٹی آئی این اے 71چوہدری الیاس کی پریس کانفرنس مفروضوں پر مبنی ہے۔ ان خیالات کا اظہارترجمان ڈیرہ کوٹلہ ملک نوید اعوان نے گزشتہ روز ہنگامی پریس کانفرنس میں کیا انہوں نے کہا کہ چوہدری الیاس مسلسل دو ہفتوں سے حلقے کی عوام کو گمراہ کر رہے ہیں۔عوام نے چوہدری عابد رضا کی عوامی خدمت کو سامنے رکھتے ہوئے اپنا فیصلہ سنا دیا ہے۔ اپنی ہار کو کھلے دل سے تسلیم کریں اور حلقے کی عوام کی خدمت کو اپنا شعار بنائیں۔ پچھلے جنرل الیکشن میں بھی موصوف دھاندلی کے بے بنیادالزامات لے کر سپریم کورٹ تک گئے تھے اور اس جنرل الیکشن تک عدالتوں کی طرف نظریں اٹھائے ہوئے ہیں۔ عوام کی عدالت میں اپنے آپ کو پیش کرنے کے بعد عوام کا فیصلہ بھی قبول کریں۔ انہوں نے ریٹرننگ آفیسر کی عدالت میں موقف اختیار کیا تھاکہ ہمارے پاس موجود فارم 45کے مطابق ہم الیکشن جیت چکے ہیں جس پر ہمارے وکیل نے استفسار کیا کہ اگرچوہدری الیاس کے پاس اس قسم کے کوئی فارم 45ہیں جن کی رو سے وہ الیکشن جیت چکے ہیں تو وہ معزز عدالت میں پیش کئے جائیں جس کے جواب میں الیاس صاحب کے پاس کسی قسم کا ثبو ت موجو د نہیں تھا سوائے الیکٹرانک میڈیا پر موجود غیر حتمی اور غیر تصدیقی سے زرائع سے چلنے والی چند خبریں جن کو بنیاد بنا کر موصوف پوری رات ڈھول پیٹتے رہے اور تقریریں کرتے رہے۔ اس رات بھی ان کے پاس میڈیا ٹیمیں فارم 45اور دوسرے نتائج لینے کیلئے گئی تھیں لیکن ان کو بھی یہ کوئی ثبوت نہ دے سکے۔ موصوف پوری رات بھنگڑے اور جشن کے نشے میں اپنا رزلٹ اکٹھا کرنا ہی بھول گئے اور جو کہ ابھی تک ان کے پولنگ ایجنٹس ہونے کے باوجو دبھی ان کو نہیں مہیا ہو سکے جس کا اظہا رانہوں نے اپنی پریس کانفرنس میں بھی کیا ہے۔اگر فارم 45ابھی تک نہیں مل سکے تو موصوف رات کو بھنگڑے کس بنیاد پر ڈالتے رہے۔ ہم واضح کر دینا چاہتے ہیں کہ حلقہ این اے 71کے عوام کسی بھی غیر ذمے دار اور نااہل شخص کو اپنا نمائندہ نہیں چنیں گے جس کو اپنی ذمہ داری پوری کرنی نہیں آتی وہ عوام کی خدمت کے فرائض کس طرح سرانجام دے گا۔ ایم این اے چوہدری عابد رضا نے پانچ سال حلقے کی عوام کی بھرپور طریقے سے خدمت کی ہے اور اپنی عوام کے حقوق کیلئے دن رات ایک کیا ۔ جبکہ موصوف پانچ سال بعد الیکشن لڑنے کیلئے میدان میں آگئے ۔کوئی بھی غیر قانونی و غیر آئینی ہتھکنڈا استعمال کرکے این اے 71کو فتح کرنا ناممکن ہے۔ پاکستان کی عدالتیں انصاف کا بول بالا کرنے کے لئے موجود ہیں اپنے ثبوت اور شواہد لے کر کورٹ میں جائیں۔ لیکن ریٹرننگ آفیسر کے بعد لاہور ہائیکورٹ سے رٹ پٹیشن خارج ہونے کے بعد موصوف بوکھلاہٹ کا شکار ہو چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں