141

پا کستان کی بڑی یونیورسٹی میں طالبات پر ’جینز‘ پہننے کے بعد ایک اور سخت پابندی عائد کردی گئی

لاہور (نیوز ڈیسک ) لاہور کی یونیورسٹی میں طالبات کے جینز پہننے پر پابندی عائد کیے جانے کے بعد ایک اور بڑی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق یونیورسٹی آف انجینئیرنگ اینڈ ٹیکنالوجی میں گلوکاروں اور فنکاروں کے داخلے پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ یونیورسٹی کی طلبا سوسائٹیز کو فنکاروں کو تقریبات میں مدعو کرنے سے روک دیا

گیا ہے۔یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے یہ احکامات جاری ہونے کے بعد طلبا نے تشویش کا اظہار کیا ہے اور کہا ہےکہ اس طرح کی پابندیوں کے پیچھے کوئی معقول وجہ تاحال سامنے نہیں آسکی۔ یاد رہے کہ اس سے قبل رواں ماہ کے آغاز پر ہی یونیورسٹی آف انجینئیرنگ اینڈ ٹیکنالوجی میں طالبات کے جینز پہننے پر پابندی عائد کر دی گئی تھی۔ یونیورسٹی آف انجینئیرنگ اینڈ ٹیکنالوجی (یو ای ٹی) نے طلبا کے لیے ڈریس کوڈ جاری کرد یا ہے ڈریس کوڈ کے تحت طالبات کو دوپٹہ اور اسکارف لازمی لینے کی ہدایت کی گئی، یونیورسٹی میں طالبات پر سلیولیس شرٹس پہننے پر بھی پابندی عائد ہو گی۔طالبات پر کیپری پینٹس پہننے پر بھی پابندی عائد ہو گی جس کا باقاعدہ نوٹی فکیشن بھی جاری کیا گیا تھا۔ نوٹی فکیشن کے مطابق یونیورسٹی کے طلبا بھی جینز پہننے کے مجاز نہیں ہوں گے۔ لڑکوں کو صرف ڈریس پینٹ شرٹ اور کوٹ پہننے کی اجازت ہو گی۔ جمعہ کے روز طلبا صرف شلوار قمیض پہن کر آئیں گے۔ ڈریس کوڈ کی پابندی کرنا تمام طلبا و طالبات کے لیے لازمی قرار دیا گیا تھا۔ خیال رہے کہ اس سے قبل صوبہ پنجاب کے میڈیکل کالجز میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبا کے

لیے بھی ڈریس کوڈ جاری کیا گیا تھا۔ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز نے صوبہ پنجاب کے میڈیکل کالجوں کے طلبا کے لیے ڈریس کوڈ لاگو کیا تھا۔ نئے ڈریس کوڈ کے مطابق طلبا کے جینز،ٹی شرٹ، چپل ، سینڈل اور شارٹس پہننے پر پابندی عائد کی گئی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں