44

مولانا عادل خان کا قتل بین الاقوامی سازش ہے سندھ حکومت کی جانب سے علماء کو سیکورٹی مہیا نہ کرنے کی تحقیقات ہونی چاہیے اورذمہ داران کو بھی اسکی سزاملنی چاہیے: طاہر اشرفی

لاہور(عزیزالرحمن مجاہد)وزیر اعظم پاکستان کے معاون خصوصی وپاکستان علماء کونسل کے چیئرمین حافظ طاہر محمود اشرفی نے اساتذہ علماء مولانا عادل خان کے قتل کی بھر پور مذمت کرتے ہوئے اسے بین الاقوامی سازش قراردیا اور واضح کیا سندھ حکومت کی جانب سے علماء کو سیکورٹی مہیا نہ کرنے کی تحقیقات ہونی چاہیے اورذمہ داران کو بھی اسکی سزاملنی چاہیے انہوںنے کہاکہ وفاقی حکومت کا دو ٹوک اعلان ہے کہ شرپسند عناصر اوردہشت گردوں کیلئے کہیں بھی نہ نرمی کا معاملہ ہے اورنہ ہی توہین وتکفیر کرنے والے گرفتار افراد کو رہاکیاجائے گا انہوںنے کہاکہ افغانستان سے رسوائی کے بعد بھارت پاکستان سے بدلہ لینا چاہتاہے اوراپنے ایجنٹوں کے ذریعے پاکستانی فوج اورمذہبی طبقات کو نشانہ بنانا چاہتا ہے تاکہ پاکستان کی جغرافیائی اورنظریاتی سرحدوں کو کمزور کیاجاسکے انہوںنے کہاکہ مدارس کو بلاوجہ سیاست میں نہ گھسیٹا جائے کوئی طالب علم ملکی سلامتی اداروں کے خلاف نہیں ہے مدارس عربیہ اپوزیشن جماعتوں کی تحریک کا کسی صورت حصہ نہیں بنیں گے لہذامدارس کے بچوں کے معاملہ پر بیان بازی نہیں ہونی چاہیے ان خیالات کا اظہار انہوںنے سیرت اکیڈمی لاہور میں مختلف مکاتب فکر کے جید علماء کرام مولانا اسداللہ فاروق،مولانا محمد خان لغاری ،مولانا سید ضیاء اللہ شاہ بخاری ،مولانا حافظ کاظم رضا ،مولانا محمد شفیع قاسمی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیااس موقع پرمولانا اسید الرحمن سعید،مولانا اشفاق پتافی،مولانا عبدالقیوم فاروقی ،علامہ زبیر عابد،مولانااسلم صدیقی ،مولانا مبشر رحیمی ، قاری عبدالحکیم اطہر،قاری شمس الحق،مولانا عبدالغفار فاروقی ،مولانا ابراہیم حنفی،قاری فیصل ،مولانا نعیم بادشاہ سمیت دیگر علماء بھی موجود تھے حافظ طاہر محمود اشرفی کامزیدکہناتھاکہ بھارت افغانستان میں امن مذاکرات کے آغاز کے بعد خطہ کا امن تباہ کرنا چاہتاہے اس کیلئے بھارت میں پاکستانی افواج کے خلاف اور پاکستان میں فرقہ وارانہ تشددپھیلانے کیلئے سازشیں تیارکی جارہی ہیں جن کو ملک کے سلامتی کے اداروں نے محرم الحرام کے دوران اوراس سے قبل ناکام بنایا پاکستان دشمن جانتاہے کہ مضبوط پاکستانی فوج ،قوم اورعلماء کے اتحاد سے پاکستان مستحکم ہے اگر پاکستان کو کمزورکرناہے تو پھر پاکستان کے نظریاتی اورجغرافیائی محافظوں کے خلاف سازش کرنا ہوگی اورعلماء کے اتحاد کو انتشار میں بدلناہوگا جس میں بھارت کو انشاء اللہ ناکامی ہوگی انہوںنے کہاکہ مولانا عادل خان کی شہادت اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے قومی سلامتی کے ادارے مجرمان کے تعاقب میں ہیں انہیں جلد گرفتار کرلیاجائے گا انہوںنے کہا کہ پاکستان میں تمام مکاتب فکر کے علماء ومشائخ اسلام اورپاکستان دشمن سازشوں سے آگاہ ہیں کراچی میں مولانا عادل خان کا لاکھوں افراد کاجنازہ پیغام دے رہاہے کہ ہم امن چاہتے ہیںپوری قیادت امن اوردہشت گردی کے خلاف ایک ہیںانہوںنے بتایاکہ وہ رواں ہفتے ہی مختلف مکاتب فکر کے جید علماء کا وفد لیکر کراچی جارہے ہیں جہاں وہ مولانا عادل خان کے اہلخانہ سے تعزیت کے علاوہ مختلف مدارس کادورہ کرنے کے علاوہ علماء کرام سے ملاقاتیں بھی کریں گے انہوںنے کہاکہ محرم الحرام سے قبل اوردوران توہین وتکفیر کرنے والے مجرموں کی اکثریت گرفتارہوچکی ہے اورجو باقی ہیں وہ بھی جلد گرفتار ہوں گے انہوںنے کہاکہ پنجاب میں توہین وتکفیر والوں کے خلاف 23ایف آئی آر درج ہوئیں جن میں سے 22مقدمات کے مجرم گرفتار ہوچکے ہیں ایک سوال کے جواب میں انہوںنے واضح کیاکہ اداروں کے علم میں ہے کہ کچھ لوگ جانے انجانے میں پاکستان دشمنوں کے ہاتھوں میں استعمال ہورہے ہیں انہیں معافی نہیں ملے گی انہوںنے اعلان کیا کہ ملک میں یونین کونسلز سے مرکز تک انٹرفیتھ ہارمنی کونسلز قائم کی جائیں گی جو بین المسالک وبین المذاہب رواداری کو مضبوط بنانے میں مددگار ہوں گے ایک سوال کے جواب میں ان کاکہناتھاکہ ملک میں فساد اورانتشار پھیلانے والوں کو روکنا علماء سمیت ہر شہری کی ذمہ داری ہے علماء ومشائخ ملکی استحکام کیلئے اپنا کرداراداکریں رکن پنجاب اسمبلی جلیل شرقپوری کے ساتھ ہونے والا واقعہ کے بارے میں انہوںنے کہاکہ عدم برداشت کا رویہ جو سیاسی رہنما اختیار کررہے ہیں وہ قابل مذمت ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں