80

اسلام عورت کو ماں،بہن،بیٹی اور بیوی کی حیثیت سے قابل عزت مقام اور رتبہ دیتا ہے۔ دردانہ صدیقی اسلامی قوانین پر عمل ہی عورت کے تحفظ کا ضامن ہے، سینیٹ میں منظور کیے گئے ویمن پروٹیکشن بل پرمرکزی سیکریٹری جنرل حلقہ خواتین پاکستان کا بیان

کراچی/02جولائی ( پاسبان نیوز)حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان کی سیکرٹری جنرل دردانہ صدیقی نے کہا کہ اسلام کے سنہری اصولوں میں ہی سراسر سلامتی اور تحفظ ہے۔ اسلام کی عطا کردہ حقوق اور مقام و مرتبے سے بغاوت کرنے والے تحفظ نسواں بل عورت کے حقوق کے ضامن نہیں بن سکتے۔ سینیٹ میں منظور کیا گیا بل جہاں  عورت کے جائز حقوق کے استحصال کو روکنے میں معاون ہو گادوسری طرف”گھریلو تشدد بل“آزاد خیال معاشرے کے قیام کی طرف پیش رفت کی طرف اقدام ہے۔”گھریلو تشدد“بل جو کہ سینٹ سے منظور ہو کر آئین پاکستان کا حصہ بن چکا بظاہر خوشنما،عورت کے حقوق کا محافظ دکھائی دیتاہے مگر اس کے مندرجات دیکھیں تو معاملہ اس کے برعکس ہے۔یہ خاندانی نظام، خونی رشتوں اور خصوصا والدین اور اولاد، میاں بیوی کے درمیان تعلقات، خانگی زندگی کی بنیادیں ہلا کے رکھ دے گا۔ویمن پروٹیکشن بل پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ماں باپ کو والدین کے اصلاح طلب اُمور پر سرزنش کو قابل سزا گرداننا، عائلی زندگی میں قانون کی بے جا مداخلت،مناسب عمر میں شادی کو قابل سزا قرار دینا،یہ سب مغربی معاشرت کے ایسے پہلو ہیں جنہوں نے خاندانی نظام کا تانا بانا اُدھیڑ کر رکھ دیا ہے۔انہوں نے اس بل کی منظوری پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس بل کے مضبوط خاندانی نظام پر انتہائی گمراہ کن اثرات مرتب ہوں گے۔ یہ واضح مقاصد کے ساتھ طے شدہ ایجنڈا ہے جو مشرقی اقدار پر کاری ضرب ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں